واصف علی واصف کے اقوال

⇐ حرام چیزوں سے دور رہیں۔

⇐ روح انسان کی اصل ہے۔

⇐ فلسفہ زندگی کی سمجھ ہے۔

⇐ عاجزی عبادت ہے، غرور گناہ۔

⇐ کسی کی احسان کو اپنا حق نہ سمجھ لینا ۔

⇐ صدق و صفا انسان کی زینت ہے۔

⇐ علم طاقت ہے، حکمت روشنی۔

⇐ زندگی ایک سفر ہے، منزل نہیں۔

⇐ کسی کی احسان کو اپنا حق نہ سمجھ لینا ۔

⇐ جہاں محبت ہو، وہاں خدا بھی ہوتا ہے۔

⇐ درد سے گزر کر ہی انسان کامل ہوتا ہے۔

⇐ توکل پر یقین رکھو، مایوسی سے دور رہو۔

⇐ صبر آزمائش کا پتھر ہے، شکر نعمت کا شکر۔

⇐ وقت بہت قیمتی ہے، اسے ضائع مت کرو۔

⇐ کامیابی کے لیے محنت اور لگن ضروری ہے۔

⇐ ناکامی سے مایوس نہ ہوں، دوبارہ کوشش کریں۔

⇐ حقیقت کی تلاش میں ہمیشہ آگے بڑھتے رہو۔

⇐ ہر دن کی قیامت ہر روز شام کو ہو جاتی ہے۔

⇐ دنیا کو ہنسانے والا تنہائیوں میں رویا بھی ہے۔

⇐ خود پر اعتماد رکھو، کامیابی خود بہ خود آئے گی۔

⇐ موت سے ڈرنا نہیں چاہیے، اسے قبول کرنا چاہیے۔

⇐ غیرت انسان کی عزت ہے، حسد اس کی ذلت۔

⇐ اپنے آپ کو پہچاننا ہی سب سے بڑی معرفت ہے۔

⇐ دنیا ایک امتحان گاہ ہے، کامیابی ہی اصل مقصد ہے۔

⇐ محبت وہ آگ ہے جو دل کو جلاتی ہے، بجھاتی نہیں۔

⇐ کرم انسان کو بلند کرتا ہے، بخیل انسان کو گراتا ہے۔

⇐ تمہارا آئینہ، تمہارے دوست کی مسکان ہے۔

⇐ محبت کی کیمیا، صبر، محبت، اور امید ہوتی ہے۔

⇐ کامیابی کا راز عزم اور محنت میں چھپا ہوتا ہے۔

⇐ آدمی مرجاتے ہیں اور زندگی پھربھی زندہ ہے۔

⇐ حق والے کو اِس کا صحیح حق مل جانا ہی عدل ہے۔

⇐ بولنے والی زبان ، سننے والے کان کی محتاج ہے۔

⇐ بیمارو جود کے لیے ہرموسم خطرے کا موسم ہے۔

⇐ وہ شخص اللہ کو نہیں مانتا جو اللہ کا حکم نہیں مانتا۔

⇐ اچھے لوگوں کا ملنا ہی اچھے مستقبل کی ضمانت ہے۔

⇐ ج محبت میں تواضع ہونا، محبت کی اصلیت ہے۔

⇐ خواب دیکھنا فرض نہیں، بلکہ زندگی کا طریقہ ہے۔

⇐ بدبوئی کا ایک بونا، پورے باغ کو خراب کر سکتا ہے۔

⇐ اکثر ایمانداری سے کہی گئی باتیں دلوں کو چھو جاتی ہیں۔

⇐ دل کا وقت کبھی بھی کسی بھی وقت کا وقت نہیں ہوتا۔

⇐ ادب کا سفر لمحوں کا سفر ہوتا ہے، جو کبھی پورا نہیں ہوتا۔

⇐ بزمِ تحریر میں ادب کا رنگ، کبھی گہرا ہوتا ہے، کبھی انوکھا۔

⇐ زندگی کی ہر روز ایک نیا سفر ہے، اور ہر سفر ایک نیا سبق۔

⇐ جنگلات میں مُلتی ہے خوشبو، مجھ میں وطن کی خوشبو۔

⇐ زندگی کے راز، زندہ دلوں کے ساتھ ہی ہوتے ہیں۔

⇐ دنیا ایک امتحان گاہ ہے، کامیابی ہی اصل مقصد ہے۔

⇐ کامیابی کے پیچھے قوتِ ارادہ، محنت، اور استقامت ہوتی ہے۔

⇐ تم اپنی زندگی کا بھلائی دلاؤ، دوسروں کو انجامِ وفا دکھاؤ۔

⇐ جب تک زندگی ہے، جہاں بھی ہو، خواب بناتے رہو ۔

⇐ محبت کی راہوں میں محبت کا امیدوار ہمیشہ غالب ہوتا ہے۔

⇐ کمال اور خوبصورتی میں محبت ہی کیا ہے، وہی جمال ہے۔

⇐ محبت کے بغیر زندگی کیا، اور محبت ہوئی تو کیا زندگی ہے۔

⇐ جو رشتہ انسان کو خوشی دے، وہ رشتہ مزیدار ہے۔

⇐ زندگی ایک سفر ہے، ساتھی تلاش کرو نوازی کے لئے۔

⇐ محبت کرنے والے بہترین انسان ہیں، جو بغض نہیں کرتے۔

⇐ خواب دیکھنا ہو، پھر اسے حقیقت بنانے کی حمایت کرو۔

⇐ توقع کرنے والے کمیاب ہوتے ہیں، انتظار کرنے والے نادر۔

⇐ زندگی ایک کتاب ہے، جو ناخواندہ رہنمائی دیتی ہے۔

⇐ بہترین کلام وہی ہے جس میں الفاظ کم اور معنیٰ زیادہ ہوں۔

⇐ عروج اُس وقت کو کہتے ہیں جس کے بعد زوال شروع ہوتا ہے۔

⇐ غافل کی آنکھ اس وقت کھلتی ہے جب بند ہونے کو ہوتی ہے۔

⇐ ضرورت کا علم اور چیز ہے، علم کی ضرورت کچھ اور شے ہے۔

⇐ انسان کا دل توڑنے والا شخص اللہ کی تلاش نہیں کرسکتا۔

⇐ دریا جہاں سے ایک بار گزرتا ہے دیر پا نشان چھوڑ جاتا ہے۔

⇐ جو کرتا ہے اللہ کرتا ہے اللہ جو کرتا ہے صحیح کرتا ہے۔

⇐ جھوٹا آدمی اگر سچ بھی بولے تو وہ سچ بے اثر ہوجائے گا۔

⇐ بدی کا موقع ہو اور بدی نہ کرو تو یہ بہت بڑی نیکی ہے۔

⇐ اللہ کا راستہ مومن کے دِل کے دروازے سے شروع ہوتا ہے۔

⇐ حسد انسان کو اندھا کر دیتا ہے، صبر انسان کو روشن کر دیتا ہے۔

⇐ اپنے وعدے پورے کرو، تاکہ تمہاری بات پر یقین کیا جا سکے۔

⇐ اپنی زندگی کے خود نوشتہ بنو، دوسروں کی نقل مت کرو۔

⇐ اپنے اساتذہ کا احترام کریں، وہ آپ کے علم و ہنر کے چراغ ہیں۔

⇐ اپنے والدین کی خدمت کریں، وہ آپ کی جنت کا دروازہ ہیں۔

⇐ حوصلہ کبھی نہ ہاریں، کیونکہ امید ہی زندگی کی روشنی ہے۔

⇐ غریبوں اور محتاجوں کی مدد کریں، یہ انسانیت کا تقاضا ہے۔

⇐ اپنے مقصد پر یقین رکھیں اور اس کے لیے جدوجہد کریں۔

⇐ اپنے بزرگوں کا احترام کریں اور ان کی باتوں پر غور کریں۔

⇐ جو شخص نکمی کو برداشت کرتا ہے، وہ ناکامی کو برداشت نہیں کرتا۔

⇐ سب سے بڑا بدقسمت انسان وہ ہے جو غریب ہو کر سنگ دل رہے۔

⇐ زندگی کا سفر، اپنے خوابوں کی تلاش میں موصول ہوتا ہے۔

⇐ جھکنا ایک عزت ہے، لیکن غلطیوں سے سبق سیکھنا عظیمی ہے۔

⇐ ہمارا ہونا کس کام کا اگر ہمارے نہ ہونے کا کسی کو کچھ فرق نہ پڑے۔

⇐ کسی انسان کے ساتھ ایسا سلوک نہ کرو جو تم اپنے ساتھ نہیں چاہتے۔

⇐ پریشانی حالت سے نہیں،خیالات سے پیدا ہواتی ہے۔

⇐ جس اِنسان کو اپنے آپ پر یقین نہ ہو وہ خدا پر کیا یقین رکھے گا۔

⇐ تنکے کو کبھی حقیر نہ سمجھو ورنہ وہ تمہاری آنکھ میں پڑ جائے گا۔

⇐ یقین کے ساتھ اُٹھایا ہوا پہلا قدم جو جانبِ منزل ہو ، وہی منزل ہے۔

⇐ غم یا پریشانی دراصل انسانی فیصلے اور اللہ کے حکم کے درمیان فرق کا نام ہے۔

⇐ خواب کی اونچی اڑانیں بیان کرنے سے زندگی کی پستاں ختم نہیں ہوتیں۔

⇐ سب سے زیادہ خطرناک دشمن وہ انسان ہے جو مسافر سے ذوقِ سفر چھین لے۔

⇐ ہم ایک عظیم قوم بن سکتے ہیں اگر ہم معاف کرنا اور معافی مانگنا شروع کردیں۔

⇐ کمزوروں کی ہوشیاری محنت سے ہے، طاقتوروں کی نادانی زیادتی سے ہوتی ہے۔

⇐ زندگی میں کامیابی کے لئے لازمی ہے کہ آپ خود کو کامیابی کے لئے قرار دیں۔

⇐ اپنے دوستوں کا خیال رکھیں، وہ آپ کی زندگی میں خوشیوں کا باعث بنتے ہیں۔

⇐ معاشرے کے لیے مثبت کردار ادا کریں، تاکہ دنیا ایک بہتر جگہ بن سکے۔

⇐ شکریہ ادا کرنا ایک اچھی عادت ہے، بددعائیں دینا ایک بری عادت۔

⇐ زندگی کی کچھ کھوئی ہوئی ہوتی ہے، کچھ پائی جاتی ہے، کچھ خوئی جاتی ہے۔

⇐ اگر اللہ معاف کردے تو گناہ کیا ہے؟ اگر اللہ نامنظور کردے تو نیکی کیا ہے۔

⇐ حُسن، عشق کا ذوقِ نظر ہے اور عشق قربِ حسن کی خواہش کا نام ہے۔

⇐ جِس نے ماں باپ کا ادب کیا اس کی اولاد مودب ہوگی۔ نہیں تو نہیں۔

⇐ جیو، تو اپنے خوابوں کو یاد کرنے کی چیزیں بناؤ، نہ کہ دوسروں کے بیغیر۔

⇐ اے دوست، مت پوچھ کہ محبت کیا ہے، وہ محبت ہی کیا جو محبت کو سمجھتا ہے۔

⇐کامیابی ان کی مٹی ہے، جو بے کامی کی اہمیت کو سمجھتے ہیں اور بدلتے ہیں

⇐ میرے خیالات میں ہر انسان کا کوئی سفر ہوتا ہے، اور ہر سفر کوئی کہانی۔

⇐ بچوں کے لئے والدین کا پیار، ان کی زندگی کی سب سے بڑی دولت ہوتی ہے۔

⇐ کچھ لوگ، زندگی کو گزارتے ہیں، لیکن کچھ لوگ، زندگی کو جیتے ہیں۔

⇐ تصور کی دنیا میں، احساسات کی زبان بولنے والے ہمیشہ اکلوتے ہوتے ہیں۔

⇐ زندگی کی سب سے بڑی خوشی، اپنے دل کے ساتھ ہم آہنگی ہوتی ہے۔

⇐ دوستی کا آغاز، محبت سے ہوتا ہے، لیکن اس کا انجام، معافی سے ہوتا ہے۔

⇐ دلوں کو مشغول رکھو، زندگی ایک عید کی طرح ہے، جسے خوشی سے گزارو۔

⇐ ا ہمیشہ چاہنے والے بھی گھمنے لگتے ہیں، جب کوئی شخص بدل جاتا ہے۔

⇐ جب مرنے والوں کو خبر ملتی ہے، تو سب مرنے والوں کے دل ٹکٹکنے لگتے ہیں۔

⇐ تو نے جو کہا، ایسا نہیں ہوتا، لیکن جو ہوتا ہے، اس سے بھی بدتر کچھ نہیں ہوتا۔

⇐ اپنے ہمسایوں سے اچھے تعلقات رکھیں، وہ آپ کے غم و خوشی میں شریک ہوتے ہیں۔

⇐ ع ہمیشہ امید رکھو، کیونکہ امید کی روشنی ہر مشکل کو ہل کرنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔

⇐دشمن گھر میں آجائے یا دوست گھرسے چلا جائے دونوں حالتوں میں مصیبت ہے۔

⇐بے سکونی تمنا کا نام ہے۔ جب تمنا تابع فرمانِ الٰہی ہو جائے تو سکون شروع ہو جاتاہے۔

⇐ محبت کے پتے کبھی بھی اپنا رنگ نہیں بدلتے، بس اپنے موسم کا انتظار کرتے ہیں۔

⇐ حقیقت میں عقلمندی اس پر عمل کرنے میں ہے، جو آپ کے لئے بہتر ہو۔

⇐ اپنے علم کو عمل میں لانے کے لیے یقین کے ساتھ ساتھ ایک رہنما کی ضرورت ہوتی ہے۔

⇐ اپنے علم کو عمل میں لانے کے لیے یقین کے ساتھ ساتھ ایک رہنما کی ضرورت ہوتی ہے۔

⇐ انسان جتنی محنت خامی چھپانے میں صرف کرتا ہے اتنی محنت میں خامی دُور کی جاسکتی ہے۔

⇐ اللہ کی رحمت سے انسان اس وقت مایوس ہوتا ہے جب وہ اپنے مستقبل سے مایوس ہو۔

⇐ روزے کے انکاری جب عید مناتے ہیں تو اِن کے چہرے بے نور ہوتے ہیں۔

⇐ کامیابی کے لئے محنت کی ضرورت ہے، لیکن کامیابی کی اکثر دلیل، ایمانداری ہوتی ہے۔

⇐ تمہارے ارادے کو قوت بخشوں، تو تم زندہ ہو، اور اگر کامیابی کو پانا چاہتے ہو، تو محنت کرو۔

⇐ دنیا بھول نہ جائیں، لیکن جو لوگ انسانوں کو بھول جاتے ہیں، وہ اپنے آپ کو بھول جاتے ہیں۔

⇐ محبت ایک خوبصورت غلط فہمی ہوتی ہے، جو ہمیں کسی کے غلط امیدوں میں مبتلا کر دیتی ہے۔

⇐ کتابوں کی دنیا میں رہ کر ادب نہیں آتا، ادب تو وہ ہے جو ان کی محافل میں آ کر انسان کو بدلے۔

⇐ محبت کی راہوں میں دوسرے کی خوشی کو دیکھنا اور اس پر عمل کرنا عظیمیت کی علامت ہے۔

⇐ کوشش اور دعا کریں کہ جیسے آپ کا ظاہر خوبصورت ہے ویسے ہی آپ کا باطن خوبصورت ہوجائے۔

⇐ دوسرے مسلمانوں کو مرعوب کرنے کے لئے اپنے مشاہدات بیان کرنے والا انسان جھوٹا ہے۔

⇐ سچے انسان کے لیے یہ کائنات عین حقیقت ہے اور جھوٹے کے لیے یہی کائنات حجابِ حقیقت ہے۔

⇐ خواب نہ چھوڑے جاسکتے ہیں، نہ پورے کئے جاسکتے ہیں …. بس دیکھے جا سکتے ہیں۔

⇐ ضمیر کی آوازنہ تو ظاہری زبان سے دی جاتی ہے اور نہ ہی اِن کانوں سے سنائی دے سکتی ہے۔

⇐ زندگی میں ہمیشہ آسان راستہ نہیں ہوتا، لیکن ایمانداری اور محنت سے ہر مشکل کو پار کیا جا سکتا ہے۔

⇐ تمہاری محنت کا معیار، تمہاری ناکامی نہیں، بلکہ تمہاری محنت سے تمہاری نکامی کا مقابلہ کرنا ہے۔

⇐ دنیا میں سب سے آسان کام کسی کو نصیحت کرنا ہے اور سب سے مشکل کام نصیحت پر عمل کرنا ہے

⇐ وہ لوگ جو انسان کو چھوڑ کر یا انسان سے منہ موڑ کر خدا کی تلاش کرتے ہیں، کامیاب نہیں ہوسکتے۔

⇐ انسان زندہ ہونے کے باوجود زندگی کو نہیں سمجھ سکتا، وہ مرے بغیر موت کو کیسے سمجھ سکتا ہے۔

⇐ علم اتنا حاصل کریں کہ اپنی زندگی میں کام آئے۔ علم وہی ہے جو عمل میں آسکے ، ورنہ ایک اضافی بوجھ ہے۔

⇐ انسان اپنا بہت کچھ بدل سکتا ہے حتیٰ کہ شکل بھی تبدیل کرسکتا ہے لیکن وہ فطرت نہیں بدل سکتا ۔

⇐ اولاد کو زمانہ جدید کے مطابق تعلیم دو تاکہ رزق کما سکیں اور دین کا علم دو تاکہ وہ برباد نہ ہوجائیں۔

⇐ جب تک اپنے آپ کو اللہ کے آگے پوری طرح جوابدہ نہ پاﺅ، کسی انسان کو اپنے سامنے جوبدہ نہ کرنا۔

⇐ کوئی مسلمان ایسا نہیں جو خوشی کے ساتھ گناہ کرے۔ گناہ بیماری کی طرح کہیں اسے لاحق ہو جاتا ہے۔

⇐ خالق کا گلہ مخلوق کے سامنے نہ کرو اور مخلوق کا شکوہ خالق کے سامنے نہ کرو۔۔۔۔ سکون مل جائے گا۔

⇐ محبت کا پیغام دل سے بھیجو، کیونکہ الفاظ تو کوئی بھی کہ سکتا ہے، مگر دل سے بھیجنے والی محبت، کسی اور کو محسوس ہوتی ہے۔

⇐ پہاڑ کی چوٹی تک جانے کے لئے کتنے ہی راستے ہوسکتے ہیں لیکن سفر کرنے والے کے لئے صرف ایک ہی راستہ ہوتا ہے۔

⇐ زندگی خدا سے ملی ہے، خدا کے لیے استعمال کریں۔ دولت خدا سے ملی ہے، خدا کے راہ میں استعمال کریں۔

⇐ زندگی میں دو شریک بہتر ہوتے ہیں، ایک عورت کا حسین زندگی کا اساس ہوتا ہے اور دوسرا ایک دوست کا پیار۔

⇐ زندگی میں کمیابی کا راز اس میں ہے کہ آپ کی خواہشات کتنی بڑی ہیں اور آپ کتنے بڑے خواب دیکھتے ہیں۔

⇐ خوشی اس کے پیچھے دوڑیں جو خوشی کو بھیولا ہوا ہے، نہ کہ اس کے پیچھے جو دنیا کو خوش کرنے کیلئے بھاگتا ہے۔

⇐ بادشاہوں نے بادشاہی چھوڑ کر درویشی تو قبول کی لیکن کسی درویش نے درویشی چھوڑ کر بادشاہی نہیں قبول کی۔

⇐ صرف بزرگوں کی یاد منانے سے بز رگوں کا فیض نہیں ملتا، بزرگوںکے بتائے ہوئے راستے پر چلنے سے بات بنتی ہے۔

⇐ دُعا سے حاصل کی ہوئی نعمت کی اتنی قدر کریں جتنی منعم کی۔ حاصل دعا کی عزت کریں۔ دعا منظور کرنے والا خوش ہوگا۔

⇐ دُعا سے حاصل کی ہوئی نعمت کی اتنی قدر کریں جتنی منعم کی۔ حاصل دعا کی عزت کریں۔ دعا منظور کرنے والا خوش ہوگا۔

⇐ کسی ایک مقصد کے حصول کا نام کامیابی نہیں۔ کامیابی اس مقصد کے حصول کا نام ہے جس کے علاوہ یا جس کے بعد کوئی اور مقصد نہ ہو۔

⇐ جو شخص سب کی بھلائی مانگتا ہے، اللہ اس کا بھلا کرتا ہے، جن لوگوں نے مہمانوں کے لیے لنگر خانے کھول دیے ہیں، کھبی محتاج نہیں ہوئے۔

⇐ اکثر وقت انسان خود کو اپنی فکر کی زندگی میں محبت کے لیے بیوقوف سمجھتا ہے، جبکہ حقیقت میں انسان کی فکر کا وجود ہی محبت کی بنیاد ہوتا ہے۔

⇐ سمندر کا وہ پانی جو سمندر سے باہر ہو اُسے دریا ،جھیل، بادل ، آنسو ، شبنم کچھ بھی کہہ دو، لیکن پانی کا وہ حصہ جو سمندر میں شامل ہوجائے، وہ سمندر ہی کہلائے گا۔

⇐ شیطان نے انسان کو نہ مانا، اللہ نے اس پر لعنت بھیج کر اسے نکال دیا۔ انسان کے دشمن کو اللہ نے اپنا دشمن کہا۔ انسان اللہ کے دشمن سے دوستی کرلے تو بڑے افسوس کا مقام ہے۔

⇐ امیر کی سخاوت اللہ کی راہ میں تقسیم رزق میں ہے، اور غریب کی سخاوت تسلیم تقسیم رازق میں ہے۔ وہ غریب سخی ہے جو دوسروں کے مال کو دیکھنا اور اس کی تمنا کرنا چھوڑ دے۔

⇐ اگر سکون چاہتے ہو تو دوسروں کا سکون برباد نہ کرو۔ اللہ سے معافی چاہتے ہو تو لوگوں کو معاف کردو۔ اللہ کا احسان چاہتے ہو تو لوگوں پر احسان کرو۔ نجات چاہتے ہو تو سب کی نجات مانگو۔

⇐ ہر انسان ہردوسرے انسان سے متاثر ہوتا رہتا ہے، ایک انسان دوسرے کے پاس سے خاموشی سے گزر جائے تو بھی اپنی تاثیر چھوڑ جاتا ہے۔ انسان دوسرے انسان کے لئے محبت ، نفرت اور خوف پیدا کرتے ہی رہتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں